اب کتے بھی بنیں گے ڈاکٹر

dog doctors

کتوں کو جاسوسی سمیت کئی اہم کاموں کے لیے استعمال کیا جا رہا ہے تاہم برطانوی سائنسدانوں کا خیال ہے کہ کتوں سے جاسوسی کے علاوہ جان لیوا مرضوں کی تشخیص کا کام بھی لیا جا سکتا ہے۔

جی ہاں، برطانوی سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ کتے نہ صرف کینسر اور ذیابیطس کے چند اقسام کی تشخیص کر سکتے ہیں۔ بلکہ کتے ملیریا جیسی جان لیوا بیماری کی تشخیص بھی آسانی سے کر سکتے ہیں۔

جی ہاں برطانیہ کی ’درہم یونیورسٹی’ کے سائنسدانوں نے ملیریا کی تشخیص کے لیے کتوں سے متعلق کام کرنے والے ایک سماجی ادارے کی مدد سے کتوں کی تربیت کی۔

سائنسدانوں نے ’میڈیکل ڈٹیکشن ڈاگز آرگنائیزیشن’ کی مدد سے کتوں کی تربیت کی ہے، جو بو سونگھنے کی اپنی خصوصی صلاحیت کو استعمال کرکے ملیریا کی تشخیص کریں گے۔

اس ادارے کے کتے نہ صرف ملیریا بلکہ کئی طرح کی بیماریوں کی تشخیص بھی کرتے ہیں، جنہیں پہلے تربیت دی گئی تھی۔

ملیریا کی تشخیص کے لیے کتوں کی تربیت کرنے والے سائنسدانوں کے مطابق جس طرح کتے منشیات، بم اور ہتھیار سمیت دیگر چیزوں کی تلاش کا کام کرتے ہیں، اسی طرح ان میں انسان کے کپڑے اور جسم کی بو سونگھ کر ان میں بیماریوں کا پتہ لگانے کی اہلیت بھی موجود ہے۔

ایک رپورٹ میں بتایا گیا کہ کتوں کی تربیت کرنے والے ماہرین نے تجربے کے لیے افریقی ملک گیمبیا کے 600 بچوں کے جرابے اکٹھے کیے، جنہیں بعد ازاں تربیت لینے والے کتوں کو دیا گیا۔

ماہرین نے امید ظاہر کی کہ اگر کتوں کو ایسی بیماریوں کی تشخیص کے لیے چند ماہ کی تربیت دی جائے تو وہ ایسی بیماریوں کا فوری طور پر پتہ لگانے میں ڈاکٹرز کی مدد کرسکتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.