جاپانی وزیراعظم کی جوتوں سے تواضع

japani pm

تل ابیب (مانیٹرنگ ڈیسک) اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو کی جانب سے سرکاری رہائش گاہ پر جاپان کے وزیر اعظم شنزو آبے کو دئیے گئے عشائیے میں میٹھا جوتے میں پیش کردیا گیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق جن جوتوں میں میٹھا پیش کیا گیا وہ اصلی نہیں تھے بلکہ خاص دھات کے بنے ہوئے تھے۔ جاپانی وزیر اعظم نے میٹھا تو کھا لیا لیکن جاپانی سفارتکار سیخ پا ہوگئے اور سوشل میڈیا پر بحث چھڑ گئی۔

اسرائیلی وزیر اعظم کے ذاتی شیف نے جن جوتوں میں میٹھا پیش کیا ان میں چاکلیٹس، اور شیریں خوان موجود تھیں۔ جاپان میں جوتے کو انتہائی توہین آمیز سمجھا جاتا ہے۔ جاپانی اپنے دفاتر میں جوتے اتار کر داخل ہوتے ہیں۔

japan- prime minister

دوسری جانب اسرائیلی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ کھانے میں پیش کی جانے والی ڈشز کی منظوری وزارت خارجہ نے نہیں دی تھیں۔ ہم شیف کا احترام کرتے ہیں اور اسے سراہتے ہیں۔ وہ انتہائی تخلیقی ذہن رکھتا ہے۔

Author: admin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.