دھاندلی ثابت نہ ہوئی توعمران خان کو پھانسی ہونی چاہیے:سابق ایم آئی افسر

muzfar ranjha

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) ملٹری انٹیلی جنس (ایم آئی) پنجاب برانچ کے سابق چیف بریگیڈیئر(ر) مظفر علی رانجھا نے کہا ہے کہ 2013 کے عام اتنخابات میں دھاندلی کے حوالے سے” چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان اپنا دعویٰ ثابت کرنے میں ناکام رہے تو اس کی سزا پھانسی سے کم نہیں ہونی چاہیے”۔
ایم آئی پنجاب برانچ کے سابق چیف بریگیڈیئر(ر) مظفر علی رانجھا نے عمران خان کے اس دعوے کو مسترد کردیا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ 2013 کے انتخابات میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کو فوج کی معاونت حاصل رہی۔
مظفر رانجھا کا کہنا تھا کہ ’اس وقت ہم دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑرہے تھے جس میں کامیابیاں مل رہی تھیں‘۔عدالتی کمیشن کی جانب سے دھاندلی کے الزامات پرتحقیقات کے باوجود سیاسی جماعت کے سربراہ کا الزامات لگانا قطعی بے بنیاد ہے۔انہوں نے عمران خان کو مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ اگر وہ گزشتہ تحقیقات سے مطمئن نہیں ہیں تو دھاندلی کے الزامات دوسرے عدالتی کمیشن میں لے کر جائیں۔عمران خان کے الزام پر خصوصی جوڈیشل کمیشن بنانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ’عمران خان بیان حلفی جمع کرائیں میں بھی بیان حلفی دوں گا، جو بھی غلط نکلے اسے سخت سزا دی جائے‘۔
انہوں نے ازراہِ تمسخر کہا کہ “اگر پھر بھی عمران خان اپنا دعویٰ ثابت کرنے میں ناکام رہے تو اس کی سزا پھانسی سے کم نہیں ہونی چاہیے”۔

Author: admin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.