رقص میں پہلی پی ایچ ڈی کرنے والی ڈاکٹرراکھی ساونت

rakhi sawant

میری تعلیم انگریزی زبان میں نہیں لیکن انہوں نے اداکاری اور رقص میں پی ایچ ڈی کررکھا ہے، ‘میں ڈاکٹر راکھی ساونت ہوں’۔ بولی وڈ ہنگامہ ڈاٹ کام کے ایک پروگرام میں انٹرویو دیتے ہوئے راکھی ساونت نے تنوشری دتہ سے متعلق الزامات کی تفصیلات بتاتے ہوئے مزید انکشافات کیے۔

پروگرام کے میزبان نے راکھی ساونت سے سوال کیا کہ ‘لوگ آپ کے تنوشری دتہ سے متعلق حالیہ انٹرویو کے حوالے سے کہتے ہیں کہ آپ عورت ہو کر عورتوں کے خلاف ہیں’۔

تنوشری دتہ پر لگائے جانے والے ریپ کے الزامات پر پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے راکھی ساونت کا کہنا تھا کہ ‘اگر کسی کے پاس ثبوت نہ ہوں تو کیا اس کو شکایت کرنے کی بھی اجازت نہیں ہے؟ کیا وہ تھانے نہیں جاسکتا کیا وہ عدالت نہیں جاسکتا؟’

بولی وڈ کی بولڈ اداکارہ نے سوال اٹھایا کہ تنوشری دتہ کے پاس ان کے دعوؤں سے متعلق کیا ثبوت موجود ہیں؟
انہوں نے الزام لگایا کہ تنوشری دتہ ہندوستان کے لوگوں کو بیواکوف بنارہی ہے اور ملک کا کچھ حصہ ان کی باتوں میں آکر بیواکوف بھی بنا رہا ہے۔

راکھی ساونت نے دعویٰ کیا کہ 12 سال قبل تنوشری دتہ نے انہیں ‘طلاق دے دی تھی’، جس پر میزبان نے کہا کہ انہوں نے آپ کو چھوڑ دیا تھا، راکھی ساونت کا کہنا تھا کہ ‘لیکن اب میں سب کام چھوڑ چکی ہوں’۔

ایک سوال کے جواب میں راکھی ساونت کا کہنا تھا کہ ‘کون کہتا ہے کہ میں لو کلاس سے ہوں یہ ضرور ہے کہ میری تعلیم انگریزی زبان میں نہیں ہوسکی تاہم میں نے اداکاری اور رقص میں پی ایچ ڈی کررکھا ہے، میں ڈاکٹر راکھی ساونت ہوں’۔

‘می ٹو’ مہم کے حوالے سے ہونے والے انٹرویو کے دوران میزبان کے سوال پر راکھی ساونت کا کہنا تھا کہ وہ خواتین کے خلاف نہیں ہیں لیکن ایسا ممکن نہیں ہے وہ عورت ہونے کے ناطے ایسی عورتوں کا ساتھ دیں جو مردوں پر جھوٹے الزامات لگا رہی ہوں۔

انہوں نے کہا کہ مطلب یہ ہے کہ ‘انسانیت بھول جانی چاہیے’ میں انسان ہونے کے ناطے غلط بات کی تائید نہیں کرسکتی۔

راکھی ساونت کا کہنا تھا کہ کیونکہ وہ بچپن سے بولی وڈ فلم انڈسٹری کے ساتھ منسلک ہیں، جیسا کہ وہ بچپن میں گھر سے بھاگ کر انڈسٹری کے ساتھ منسلک ہوگئیں تھیں، انہوں نے اس انڈسٹری کو پروان چھڑتے دیکھا ہے اور اپنے لوگوں کے بارے میں بہت اچھی طرح جانتی ہیں، ‘میرا بچپن اور جوانی یہیں گزر گئی اور مجھے معلوم بھی نہیں ہوا’۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘میں کسی کا جھوٹ میں ساتھ کیوں دوں، اگر کسی نے برا کیا ہے تو کیا ہوگا لیکن میں سچائی کا ساتھ دوں گی’۔

Author: admin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.