عرب فیشن ویک کےانعقاد میں سعودی شہزادی کا اہم کردار

arab fashion week

ریاض( ٹاپ نیوز) سعودی عرب کی تاریخ میں پہلا فیشن ویک رواں ماہ منعقد ہوا۔اس فیشن ویک میں صرف خواتین کو شرکت کی اجازت تھی۔اس فیشن ویک میں جہاں امریکا، روس اور برازیل سمیت دیگر ممالک کے فیشن ہاؤسز کی ملبوسات نمائش کے لیے پیش کی گئی،وہیں مقامی فیشن ڈیزائنرز کی ملبوسات کو بھی پیش کیا گیا۔
اس فیشن ویک کو منعقد کرنے کی اجازت سعودی عرب کی حکومت نے دی تھی تاہم اس کے انعقاد میں وہاں کی ایک نوجوان فیشن ایبل شہزادی کا اہم کردار رہا۔

arab fashion

سعودی عرب میں پہلے فیشن ویک کے انعقاد کا سہرا جہاں سعودی حکومت اورعرب فیشن کونسل کو جاتا ہے، وہیں سعودی عرب کی 30 سالہ شہزادی پرنس نورا بنت فیصل السعود کو بھی جاتا ہے۔ پرنس نورا بنت فیصل السعود کا کہنا تھا کہ سعودی عرب کے لوگوں کا اپنی ثقافت سے بہت لگاؤ ہے اور ایک خاتون ہونے کے ناتے وہ اس بات کو بہت اچھی طرح سمجھ سکتی ہیں کہ یہاں ثقافت و مذہب کی کتنی اہمیت ہے۔
فیشن ویک کے حوالے سے بات کرتے ہوئےشہزادی نے مزید بتایا کہ انہیں اس تاریخی قدم کا حصہ بننے پر بہت خوشی ہوئی۔ انہیں اچھا لگا کہ لوگ فیشن ویک میں ان کی تصاویر کھینچتے نظر آئے۔
شہزادی بنت فیصل کا کہنا تھا کہ فیشن ویک میں جس طرح صرف خواتین کو آنے کی اجازت تھی۔ اسی طرح وہاں تصاویر کھینچنے کی اجازت بھی صرف فیشن کونسل کو تھی، تاہم تمام تصاویر سعودی حکومت کے عہدیداروں کی اجازت کے بعد میڈیا کو جاری کی گئیں۔

Author: admin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.