مرغی چورکی دہائی

hen

اسلام آباد (ٹاپ نیوز) مرغی چورکی دہائی۔ اڈیالہ جیل میں مرغی چوری کے الزام میں ایک سال سے قید شخص نے سپریم کورٹ میں ضمانت کی درخواست دائر کردی۔ تفصیلات کے مطابق گلگلت بلتستان سے تعلق رکھنے والے محمد زاہد پر ایک سال قبل اس کے سابقہ مالک سجاد کی جانب سے 15 مرغیاں چرانے کا الزام لگایا گیا تھا۔ بظاہر چوری کی اس جھوٹی واردات کے دو ماہ اور دس دن گزر جانے کے بعد درخواست گزار راجہ سجاد نے جواسلام آباد میں ریئل اسٹیٹ کے کاروبار کا مالک ہے ،کورال کے تھانے میں چوری کی رپورٹ درج کروادی۔ سجاد نے پولیس کو بتایا کہ 6 فروری 2018 کی رات کو اس کے آفس سے نامعلوم فرد نے 15 مرغیاں ، ایک پانی کا ڈسپینسر اور بیڈمنٹن سیٹ چرایا۔

درخواست گزار نے رپورٹ میں مزید لکھوایا کہ میں نے خود سے چور کو تلاش کرنے کی کوشش کی تھی لیکن ناکام رہا۔اب مجھے معلوم ہوا ہے کہ محمد زاہد نے میری مرغیاں چرائی ہیں۔ملزم کو گرفتار کر کے انصاف کے تقاضے پورے کیے جائیں۔اسی دن پولیس نے 380/457 (پی پی سی 1860) کے تحت ایف آئی آر درج کرلی جو کہ قابل ضمانت جرم ہے۔

ملزم زاہد کے والد 79 سالہ برادر خان نے بتایا کہ پولیس اس کیس میں نہ تو ملزم سے مرغیاں برآمد کرواسکی اور نہ ہی درخواست گزار اس ضمن میں کوئی ثبوت پیش کر سکا۔اس کے باوجود پولیس نے محمد زاہد کو اسی دن گرفتار کرلیا اور بعد میں اسے اڈیالہ جیل منتقل کر دیا گیا۔

ملزم کے والد کے مطابق زاہد اپنے 5 بچوں کا واحد کفیل ہے۔ یہ خاندان گلگت کے شہر غذر کے پاس ایک چھوٹے سے گاؤں کونوداس سے دس سال قبل اسلام آباد منتقل ہوا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.