مچھلیوں کے بارے میں دلچسپ حقائق ۔۔۔ محمد ریاض

fish

٭ ’’لنگ فش‘‘ پانی سے باہر کئی سال زندہ رہ سکتی ہے۔ اس میں گلپھڑے اور پھیپھڑے دونوں ہوتے ہیں۔
٭کچھ مچھلیاں، جیسا کہ سفید شارک، اپنے جسم کا درجہ حرارت بڑھانے کی استطاعت رکھتی ہیں۔ اس سے سرد پانیوں میں شکار کرنے میں آسانی ہوتی ہے۔
٭ستارہ مچھلی میں دماغ ہوتا ہے نہ خون۔ سائنس دان اسے مچھلی بھی شمار نہیں کرتے۔
٭زیادہ تر مچھلیوں کا گوشت نمکین نہیں ہوتا، لیکن شارک کا گوشت اتنا نمکین ہوتا ہے جتنا سمندر کا پانی۔
٭مچھلیاں بھی پانی میں ڈوب کر مر سکتی ہیں۔ مچھلیوں کو آکسیجن کی ضرورت ہوتی ہے، اگر پانی میں آکسیجن نہ ہو تو ان کا دم گھٹ جاتا ہے۔ ٭فینگ ٹوتھ مچھلی چند انچ لمبی ہوتی ہے لیکن اس کے انسانوں جتنے بڑے دانت ہوتے ہیں۔ ٭سب سے زہریلی مچھلی ’’سٹون فش‘‘ ہے۔ اس کے کاٹے کا علاج اگر نہ کیا جائے تو چند گھنٹوں میں موت واقع ہو جاتی ہے۔ ٭سب سے تیز مچھلی ’’سیل مچھلی‘‘ ہے۔ اس کی رفتار ہائی وے پر دوڑتی کسی کار جتنی تیزہوتی ہے۔
٭دنیا میں مچھلیوں کی تقریباً 32 ہزار انواع ہیں۔ نئی انواع بھی دریافت ہوتی رہتی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.