پُرتگال کا حجام ۔ ڈاکٹر شاکرہ نندنی

Dr Shakira

پورٹو سٹی میں میرے گھر سے ایک فرلانگ آگے چھوٹی سی مارکیٹ میں ایک حجام تھا۔انوکھی بات یہ تھی کہ وہ اپنے گاہکوں سے پیسے بالکل نہ لیتااور کہتا کہ میں اپنے شوق کی تکمیل کے ساتھ خدمت خلق کر رہا ہوں۔ایک شخص نے بال کٹوائے شیو بنوائی اور جب اجرت پوچھی تو حسب معمول حجام نے کہا کہ بھائی میرے لئے دعا کر دینا۔اس شخص کی پھولوں اور گفٹ کی دکان تھی۔اگلے دن جب صبح حجام دکان پر پہنچا تو وہاں پر پھول گفٹ اور وش کارڈ آویزاں تھے۔اس نے خوش دلی سے وہ لے لئے۔پھر ایک شخص جس کی گارمنٹس کی دکان تھی اس نے حجام سے بال کٹوائے اور اگلے دن اپنی خوشی سے چند عمدہ گارمنٹس پیک کر کے بھجوا دیں۔

اسی طرح ایک شخص کی گارمنٹس کی دکان تھی اس نے چند شرٹس اور ٹائی بھجوا دی۔پھر ایک دن ایک “پاکستانی” وہاں چلا گیا۔پاکستانی نے بال کٹوائے شیو بنوائی‘ غسل کیا اور اجرت پوچھی تو حسب معمول حجام نے نہ لی۔اب اگلی صبح جب حجام اپنی دکان پر پہنچا تو اس نے بھلا کیا دیکھا؟ایک “سچے پاکستانی” بن کر سوچئےاور اندازہ لگائیے‘۔

جی ہاں!

اگلی صبحوہاں 5 کے قریب ” پاکستانی ” اس کے انتظار میں بیٹھے تھے۔ 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.